نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم میں رجسٹریشن کا آغازگھر بنانے کے خواہش مند شہری رجسٹریشن فارم 22 اکتوبر سے 21 دسمبر 2018 تک مختص کردہ ضلعی ہاؤسنگ پروگرام آفس میں 250 روپے فیس کے ساتھ جمع کروا سکتے ہیں

نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم میں رجسٹریشن کا آغاز

اسکیم کے تحت پاکستانیوں کا اپنا گھر بنانے کا خواب آسان اقساط اور مناسب قیمت میں پورا ہو گا۔رجسٹریشن کے لیے فارم 22 اکتوبر سے 21 دسمبر 2018 تک مختص کردہ ضلعی ہاؤسنگ پروگرام آفس میں جمع کروائے جا سکیں گے۔رجسٹریشن فارم کی فیس 250 رکھی گئی ہے۔ 

اسلام آباد(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔11اکتوبر 2018ء) نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم میں رجسٹریشن کا آغاز آج سے شروع ہو جائے گا۔گذشتہ روز وزیراعظم عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم اتھارٹی کے قیام کا اعلان کیا تھا۔۔نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم میں رجسٹریشن کا فارم بھی نادار کی ویب سائٹ پر اپلوڈ کر دیا گیا جس میں اسکیم سے متعلق دیگر معلومات بھی فراہم کی گئی ہیں۔

اسکیم کے تحت پاکستانیوں کا اپنا گھر بنانے کا خواب آسان اقساط اور مناسب قیمت میں پورا ہو گا۔رجسٹریشن کے لیے فارم 22 اکتوبر سے 21 دسمبر 2018 تک مختص کردہ ضلعی ہاؤسنگ پروگرام آفس میں جمع کروائے جا سکیں گے۔رجسٹریشن فارم کی فیس 250 رکھی گئی ہے۔ نیا پاکستان ہائوسنگ پروگرام کے تحت پہلے مرحلے میں چاروں صوبوں ‘ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد‘ شمالی علاقہ جات اور آزاد کشمیر کے ایک ایک شہر میں پائلٹ پراجیکٹ کے تحت رجسٹریشن کا آغاز کیا گیا ہے۔

وزارت ہاؤسنگ کے ذرائع کے مطابق ابتدائی طور پر جن سات شہروں میں رجسٹریشن شروع کی جارہی ہے ان میں وفاقی دارالحکومت اسلام آباد‘ فیصل آباد‘ سکھر‘ ڈیرہ اسماعیل خان‘ کوئٹہ‘ گلگت اور مظفر آباد شامل ہیں۔ ان شہروں میں رجسٹریشن کا آغاز آج سے ہو جائے گا۔ یہ کام 60 دنوں میں نادرا سے مل کر مکمل کیا جائے گا۔حکومت کا کہنا ہے کہ نیا پاکستان ہائوسنگ پروگرام ایک اہم سنگ میل ثابت ہوگا جس کے تحت بے گھر افراد کو کم لاگت پر چھت میسر آسکے گی۔

۔۔وزیراعظم عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اتھارٹی کے قیام کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ میں خود نیا پاکستان ہاؤسنگ اتھارٹی کو مانیٹر کروں گا،نوجوان کنسٹرکشن کمپنی خود شروع کریں اور انڈسٹری میں شامل ہوں۔۔عمران خان نے یہ بھی کہا نادرا کے ساتھ مل کر گھر باننے کے لیے ڈیٹا جمع کیا جائے گا۔ابتدائی سروے کے زریعے سے لوگوں سے اسکیم سے متعلق رائے بھی معلوم کی جائے گی اور پھر تعمیر کا آغاز کیا جائے گا۔

YOUR REACTION?



Facebook Conversations



Disqus Conversations