محکمہ پاسپورٹ کی جانب سے خبر کی تردید کر دی گئی

ریاض:سوشل میڈیا پر دائمی اقامے کے حوالے سے خبر جھُوٹی نکلی

ریاض گزشتہ کئی روز سے سوشل میڈیا ویب سائٹس پر ایک خبر گردش میں تھی کہ حکومت کی جانب سے مخصوص کیٹگری کے تارکین وطن کو اگلے چند روز میں دائمی اقامہ فراہم کرنے کا منصوبہ شروع ہو رہا ہے۔ اس دائمی اقامے کے لیے اُنہیں صرف 500سعودی ریال بطور فیس ادا کرنا ہوں گے، مزید یہ کہ اُن سے مرافقین فیس بھی نہیں لی جائے گی۔

اس خبر پر سعودی عرب میں مقیم تارکین وطن کی جانب سے بہت خوشی کا اظہار کیا گیا تھا اور اسے مملکت میں غیر مقیم غیر مُلکیوں کے لیے بہت خوش آئند قرار دیا گیا تھا۔ تاہم محکمہ پاسپورٹ الجوازات کی جانب سے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی اس خبر پر جو ردِعمل ظاہر کیا گیا ہے، اُسے پڑھ کر لاکھوں تارکین وطن کے سُہانے ارمانوں پر دُکھوں کی اوس پڑ جائے گی۔

محکمے کی جانب سے واشگاف الفاظ میں کہا گیا ہے کہ تارکین وطن کو 500سعودی ریال کے عوض دائمی اقامہ دینے کے کسی منصوبے پر عمل درآمد نہیں ہونے جا رہا اور نہ ہی فی الحال ایسا کوئی منصوبہ زیر غور ہے۔ اگر ایسا کوئی منصوبہ شروع ہوا تو اس کی اطلاع مملکت کے سرکاری چینل سے باقاعدہ طور پر کر دی جائے گی۔ پاسپورٹ محکمے کے مطابق سوشل میڈیا پر پوسٹ کی جانے والی اس خبر میں بھی کوئی صداقت نہیں کہ وہ غیر مُلکی جن کا مملکت میں قیام چار برس سے زائد ہو گیا ہے، اُنہیں دائمی اقامہ دیا جائے گا۔

محکمے کی جانب سے کہا گیا ہے کہ سوشل میڈیا پر کچھ شرارتی عناصر اس قِسم کی خبریں پھیلا دیتے ہیں۔ حالیہ خبریں بھی انہی دروغ گو افراد کی کارستانی ہے۔ اس حوالے سے تفتیش جاری ہے جس کے بعد ایسی خبریں پوسٹ کرنے والے افراد کی نشاندہی کر کے اُن کے خلاف سائبر کرائم قانون ایکٹ کے تحت کارروائی کی جائے گی۔محکمے سے متعلقہ کسی بھی معلومات کی صداقت جانچنے کے لیے آفیشل ویب سائٹ یا ہیلپ لائن پر کال کی جا سکتی ہے۔

YOUR REACTION?



Facebook Conversations



Disqus Conversations