اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے کورونا کے معیشت پر پڑنے والے اثرات کی رپورٹ جاری کردی۔


اسٹیٹ بینک کے مطابق وبا سے معاشی سرگرمیوں کا دائرہ کار محدود ہوا ہے، شاپنگ مالز، ریسٹورنٹس اور دیگر عوامی مقامات کہیں جزوی کہیں مکمل بند ہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ لاک ڈاؤن تک غیر یقینی صورتحال برقرار رہے گی تاہم  عام حالات میں قدرتی آفات کے اثرات، تجدید وبحالی کے بعد معمول پر آتے ہیں۔


اسٹیٹ بینک کے مطابق کورونا کے اثرات بڑے پیمانے پر اور لمبے عرصے کے لیے ہیں  اوریہی وجہ ہے کہ  وبا کے سدباب کے اقدامات کا دورانیہ معیشت پر منفی اثرات بڑھائے گا۔

اسٹیٹ بینک کا کہنا ہے کہ معاشی بحالی پالیسیوں کو اپنا کر نمو بڑھائی جاسکتی ہیں تاہم کورونا کا پھیلاو بڑھنے سے صحت عامہ کے اخراجات بڑھیں گے۔

خیال رہے کہ ملک میں کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کیلئے لاک ڈاؤن کیا گیا تھا جس میں یکم جون سے نرمی کی گئی ہے۔

YOUR REACTION?



Facebook Conversations



Disqus Conversations